ہنس کے بولا کرو بلایا کرو
آپ کا گھر ہے آیا جایا کرو

مسکراہٹ ہے حسن کا زیور
روپ بڑھتا ہے مسکرایا کرو

حد سے بڑھ کر حسین لگتے ہو
جھوٹی قسمیں ضرور کھایا کرو

حکم کرنا بھی ایک سخاوت ہے
ہم کو خدمت کوئی بتایا کرو

بات کرنا بھی بادشاہت ہے
بات کرنا نہ بھول جایا کرو

تا کہ دنیا کی دلکشی نہ گھٹے
نت نے پیرہن میں آیا کرو

کتنے سادہ مزاج ہو تم عدم
اس گلی میں بہت نہ جایا کرو

VN:F [1.9.22_1171]
Rating: 0.0/5 (0 votes cast)